وادی کشمیر میں مکمل ہڑتال، تعلیمی و کاروباری سرگرمیاں بند، عام زندگی مفلوج

جموں،28 ستمبر،ہ س:گذشتہ روز سرینگر کے نور آباد علاقہ میں مقامی شہری کی ہلاکت کے بعد مشترکہ مزاحمتی قیادت (جے. آر. ایل) کی طرف سے دی گئی بند کال کی وجہ سے آج وادی کشمیر میں مکمل ہڑتال رہی۔ اس کے نتیجہ میں تمام کاروباری ،تعلیمی اِدارے بند رہے۔ جبکہ سڑکوں پر گاڑیوں کی آمد ورفت بھی نہ کے برابر رہی۔
شہر میں امن و قانون کی صورت حال کو قائم رکھنے کے لئے سرینگر شہر کے مختلف علاقوں میں انتظامیہ کی طرف سے پابندیاں عائد کی گئی ہیں۔ حفاظتی دستوں نے سڑکوں پر گاڑیوں کی آمد رفت کو روکنے کے لئے خار دار تار اور ناکہ بندی کی ہے۔
واضح رہے کہ گذشتہ روز دہشت گردوں کے ساتھ تصادم کے دوران دوطرفہ گولہ باری کی زد میں نور آباد سرینگر کے عام شہری کی موت واقع ہوئی تھی جس کے بعد مشترکہ مزاحمتی قیادت(جے۔آر. ایل) نے جمعہ کے روز مکمل بند کی کال دی تھی۔ دریں اثناءحریت کانفرنس (ایم) کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کو احتجاجی جلوس میں شرکت کرنے سے روکنے کے لئے گھر میں ہی نظر بند کیا گیا ہے۔ جبکہ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک کو پولیس نے ان کی رہائش گاہ مائسمہ سے گرفتار کرکے کوٹی باغ پولیس تھانہ میں منتقل کیا ہے۔

 

آپ ہمیں اپنی ہر طرح کی خبریں،مضامین،مراسلات اور ادبی تحریریں ارسال کریں۔۔۔ہم انھیں آپ کے نام کے ساتھ www.aakashtimes.com پرشائع کریں گے۔۔۔۔۔۔ادارہ