غزلیات

نیوز ڈیسک
بلا کی دْھوپ میں اک سائباں بھی ہونا تھا
یہیں کہیں مرا اپنا مکاں بھی ہونا تھا
وہ حرفِ شوق جو ہونٹوں پہ آسکا نہ کبھی
کسے خبر تھی اْسے داستاں بھی ہونا تھا
وہ آنکھ یوں نہ ہوئی نم کتابِ غم پڑھ کر
سْلگتے لفظوں میں پہلے دْھواں بھی ہونا تھا
زمیں بھی اپنی نہیں رہ سکی تو غم یہ رہا
مری زمیں کو ابھی آسمان بھی ہونا تھا
بہت سی یادیں سفر میں تھیں اس لئے ہمراہ
ہمارے ساتھ ہمارا مکاں بھی ہونا تھا
میں ہوں نہیں ہوں، نہیں ہوں تو پھر کہاں ہوں میں
یقین ہونے میں تھوڑا گْماں بھی ہونا تھا
شبیبؔ عمر نے پایا ہدف تو ہم سمجھے
کہ تیر جیسے بدن کو کماں بھی ہونا تھا
ڈاکٹر سید شبیبؔ رضوی
کاٹھی دروازہ رعنا واری سرینگر
موبائیل :- 9906685395
ہم نے مانا روز و شب دردِ جہاں سہتے ہیں آپ!
پر سُنا ہے کچھ ہوا کے رُخ پہ بھی بہتے ہیں آپ!
بات ایسی کیجئے جس کا اثر ہو دیرپا
بول اُٹھیں بے جان پتھر واہ ! کیا کہتے ہیں آپ!
آپ کی سنجیدگی کی داد دیتے ہیں سبھی
دوستوں کی سادگی پر پھر یہ کیوں ہنستے ہیں آپ؟
آج کے انسان کا معیار دوہرا خوب ہے
دیکھئے بازار کی ہر جنس سے سستے ہیں آپ!
گم شدہ تو ہوں جوابِ واقعی پی جائوں گا
جب کوئی پوچھے گا اَے قیصرؔ کہاں رہتے ہیں آپ؟
قیصرؔ الہ آبادی
125اے، راج پور ایکس نئی دہلی
نئی دلی، موبائل نمبر؛09560476576
میں نے سمجھا تھا چمن زار بیاباں نکلا
میری راتوں کی طرح چاند بھی ویراں نکلا
تیرے پیکر سے نچوڑا ہوا اِک لمحۂ زیست
میری بے چار گئی عمر پر خنداں نکلا
تیربازوں سے یہاں بچ کے کہاں تک جاتے
جس کو سمجھا تھا فرشتہ وہی انساں نکلا
میں نے دیکھا کوئی آیا ہے مسیحا کی طرح
وہ تو بردوشِ کفن شعلہ بداماں نکلا
بات محفل میں حقیقت کی کہی جو میں نے
ہر کوئی اہلِ خرد چاک گریباں نکلا
اپنے زخموں کو تو میں بھول گیا تھا سیدؔ
دشتِ ظلمات سے گزرا تو چراغاں نکلا
سید احمد سیدؔ
گلاب باغ، سرینگر
موبائل نمبر؛8803262766
آگئی دُنیا ہے زیر پائے انساں دیکھئے
بے کراں یہ وُسعتِ کوہ و بیاباں دیکھئے
عشق کی محفل میںعقلِ حیلہ گر داخل ہوئی
حُورِ مفلس کی طلب، تختِ سلیماںؑ دیکھئے
اب تلک تزویر میں ابلیس کی انسان ہے
چھوڑ کر غیرت خریدا پارئہ ناں دیکھئے
اَشک باری ہے فِراقِ یار میں تسکینِِ جاں
ناو ہے آسودہ در آغوشِ طوفاں دیکھئے
منہدم اہلِ حرم کا بتکدہ میں نے کیا
دنیا والو جرأتِ مردِمسلماں دیکھئے
دین کی بے چارگی پر اہلِ دانش ہیں خموش
اجنبی سا اُن کی نظروں میں ہے قرآں دیکھئے
مشتاق کاشمیری
موبائل نمبر؛9596167104