حادثہ متاثرین کو اب پرائیویٹ اسپتال میں بھی مفت علاج

نئی دہلی،12دسمبر:دہلی حکومت نے صحت اور تعلیم کے شعبے میں بہت نمایاں کام کیا ہے اسی ضمن میں دہلی کی حکومت نے ایک اور فیصلہ لیا ہے جس کی وجہ سے اب کوئی حادثہ کا شکار شخص علاج کے لیے تڑپ کر نہیں مرے گا۔ اس طرح کی پالیسی جلد ہی آنے والی ہے، جس میں کسی بھی سڑک پرہوئے حادثے میں زخمی کا علاج کسی بھی سرکاری کے ساتھ پرائیویٹ اسپتال میں مفت کیا جائے گا۔علاج معالجے کے دوران پورے اخراجات حکومت ادا کرے گی۔ دہلی کے عام آدمی پارٹی حکومت نے حادثات سے متعلق پالیسی کو منظوری کے لئے ایل جی کو بھیج دیا ہے۔ حالانکہ ابھی تک ہوتا یہ تھا کہ اگر سڑک پر کوئی حادثہ ہوتا ہے تو پولیس یا دیگر افرادزخمی کو سرکاری اسپتال میں داخل کرادیتے تھے کیونکہ کسی کو یہ علم نہیں ہوتا کہ متاثر شخص کی مالی حیثیت کیا ہے؟ پرائیویٹ اسپتال کا خرچ برداشت کرسکتا ہے یا نہیں۔ دہلی کے وزیر صحت ستیندر جین نے کہاکہ دہلی کی سرحد میں کسی بھی طرح کاحادثہ پیش آنے کی صورت میں، چاہے وہ زخمی ہو یا آگ سے جلنے والا ہو، یا کسی کو ایسڈ حملہ کرکے زخمی کیا گیا ہو، متاثرہ شخص ملک کے کسی بھی حصہ کا رہائشی ہو، حکومت اس کے علاج کا پورا خرچ برداشت کرے گی۔ سرکاری اسپتالوں میں، پہلے سے ہی مفت علاج کی سہولیات موجود ہیں، اب نجی ہسپتال بھی اس میں شامل ہوگئے ہیں۔
وزیر صحت نے کہا کہ دہلی میں ہر سال تقریبا 8000 حادثات واقع ہوتے ہیں، جس میں 15-20 ہزار افراد زخمی ہوتے ہیں اور تقریبا 1600 افراد مر جاتے ہیں۔
ستیندر جین کا کہنا ہے کہ ہم اسے ایل جی کو منظوری کے لئے بھیجیں گے اورامید ہے کہ جلد ہی منظوری مل جائے گی ۔