کولمبس اگر شادی شدہ ہوتا۔۔۔!

امریکہ کرسٹوفر کولمبس نے دریافت کیا۔ سنا ہے کہ وہ غیر شادی شدہ تھا۔ اگر شادی شدہ ہوتا یقینا نہ کرپاتا کیونکہ سفر پہ نکلنے سے پہلے جس قسم کے سوالات اور انٹروگیشن کا سامنا کرنا پڑتا وہ اس سارے آئیڈیا پر لعنت بھیج کر چپکا بیٹھا رہتا۔

کولمبس کی بیوی اس سے پوچھتی:

1۔ صرف تمہیں ہی کیوں چنا ہے امریکہ دریافت کرنے کے لئے؟؟؟ تم میں کون سے سرخاب کے پر لگے ہیں؟؟؟ پڑوس والے جان کو کیوں نہیں کہا؟؟؟؟ وہ تو تم سے کتنا ذہین ہے۔ ہمیشہ میٹھے خربوزے لاتا ہے۔

2۔ امریکہ دریافت کرنا کیوں ضروری ہے؟؟؟؟ دوسرے اتنے اہم کام ہیں وہ کرلو پہلے۔ ساری ٹونٹیاں لیک کر رہی ہیں۔ وہ ٹھیک کراو۔ جالے صاف کردو۔ پنکھے کتنے گندے ہو رہے ہیں۔ ہزار بار کہا ہے چڑھ کر صاف کردو۔ بس بیکار کام کرنا۔

3۔ اور کون جا رہا ہے ساتھ؟؟؟؟ مجھے یقین ہے وہ چھمک چھلو نینسی ساتھ جا رہی ہوگی۔ تبھی بانچھیں چری ہوئ ہیں۔

4۔ اچھی طرح معلوم ہے کہ چچا لڈن کی سالی کی بیٹی کے دیور کی شادی ہے۔ پتا ہے چچی کتنے ہلکے ظرف کی ہیں۔ فورا کہیں گی سلامی کے پیسے بچانے کے لیے بہانہ کیا ہے کہ امریکہ دریافت کرنے گئے ہیں۔

5۔ مجھے پتا ہے مجھ سے جان چھڑانے کے لیے جا رہے ہو۔ میری ماں کے ہاں جانے میں تو منہ بن جاتا ہے۔ حالانکہ ہمیشہ تمہاری پسند کا کھانا بناتی ہیں۔ جاوید کی نہاری اور کلچے بھی منگاتی ہیں مگر تمہارے مزاج ہی نہیں ملتے۔

6۔ یہ سارے پیسے بچانے کے بہانے ہیں۔ پتا ہے نا کہ لان کا سیزن آنے والا ہے۔ مجھے شاپنگ نہ کرانی پڑے اسی لئے جا رہے ہو۔ اچھا سنو ذرا دیکھنا اگر وہاں لان کے سوٹ اچھے ہوں تو دس بارہ لیتے آنا۔ میری اماں کے لیے بھی لے آنا۔ خوش ہونگی بیچاری۔
اتنی ساری باتیں سن کر کولمبس نے اپنے باپ کی توبہ کر لینی تھی۔ کاش کولمبس شادی شدہ ہوتا۔ اس وقت دنیا میں کتنا چین و سکون اور امن و امان ہوتا۔

منقول

 

آپ ہمیں اپنی ہر طرح کی خبریں،مضامین،مراسلات اور ادبی تحریریں ارسال کریں۔۔۔ہم انھیں آپ کے نام اور فوٹو کے ساتھ www.aakashtimes.com پرشائع کریں گے۔۔۔۔۔۔ادارہ

رابطہ:aakashtimes0@gmail.com