بات چیت سے بابری مسجد ۔ رام مندر مسئلے کا حل ممکن ہے :ڈاکٹر ظفر الاسلام

نئی دہلی،05۔ مارچ،ہ س:دہلی اقلیتی کمیشن کے چیئر مین ڈاکٹر ظفر الاسلام خاں نے کہا ہے کہ اگر بابری مسجد ۔رام جنم بھومی مسئلے کا حل عدالت سے باہر حل ہو جاتا ہے تو اس کے کافی اچھے نتائج سامنے آئیں گے ۔انہوں نے کہا ہے کہ اس معاملے پر عدالت جو بھی فیصلہ دے گی اس سے صرف ایک ہی فریق کو خوشی حاصل ہوگی جبکہ عدالت کے باہر ہونے والے فیصلے سے تمام فریق کو خوشی تو ملے گی ہی اور ملک بھر میں پھیلی نفرت کی آندھی کو بھی بہت حد تک روکنے میں مدد مل سکتی ہے ۔ڈاکٹر ظفر الاسلام نے حال ہی میں اپنے ایک تازہ مضمون میں یہ باتیں کہی ہیں جس کے آنے کے بعد انہیں بھی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔
ڈاکٹر ظفر الاسلام نے کہا ہے کہ بات چیت کسی ایک شخص یا تنظیم کے بجائے حکومت کی طرف سے سبھی مذہبی رہنماو¿ں اور تمام فریق وغیرہ پر مشتمل ایک کمیٹی بنائی جانی چاہئے اور اس کمیٹی کے ذریعہ لئے جانے والے فیصلے کو عملی جامہ پہنانے کی طاقت دی جانی چاہئے ۔تب جا کر اس معاملے پر کوئی فیصلہ لیا جا سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کو اس معاملے میں مثبت قدم اختیار کرتے ہوئے جلد سے جلد بابری مسجد۔رام جنم بھومی مسئلے کے حل کے لئے اس طرح کی ایک کمیٹی کی تشکیل کرنی چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ مولانا سلمان ندوی نے ہندو رہنما شری شری روی شنکر سے ملاقات کر کے اس معاملے کا حل عدالت سے باہر نکالنے کی ان کی مہم میں ساتھ دے کر اپنا وقار کھویا ہے ۔اور اپنا قیمتی وقت بر باد کیا ہے ۔ڈاکٹر ظفر الاسلام خاں نے کہا کہ بابری مسجد رام جنم بھومی مسئلے کی وجہ سے ملک بھر میں گزشتہ 70برسوں سے نفرت کا بازار گرم ہے ۔جگہ جگہ فرقہ وارانہ فساد ہو رہے ہیں جن میں اربوں کی مالی اور سیکڑوں جانی نقصان بھی ہوا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اب اس معاملے کو آپس میں مل بیٹھ کر کے حل کرنے کی ضرورت ہے ۔اس کے لئے مرکزی حکومت کو سامنے آنے کی ضرورت ہے اور حکومت سبھی فریق پر مشتمل ایک اعلیٰ سطحی کمیٹی بنانے کی ضرورت ہے ۔اس کمیٹی میں مذہبی رہنماوں کو بھی شامل کیا جانا چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ جب تک بات چیت میں سبھی کو شامل نہیں کیا جائے گا تب تک اس مسئلے کا کوئی حل نہیں نکل سکتا ہے اور نہ ہی بات چیت کا کوئی فائدہ ہو سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ملک میں نفرت کی نہیں محبت کی ضرورت ہے اس لئے حکومت کو اس مسئلے کے حل کے لئے مثبت رول اداکرنے کی ضرورت ہے ۔

 

آپ ہمیں اپنی ہر طرح کی خبریں،مضامین،مراسلات اور ادبی تحریریں ارسال کریں۔۔۔ہم انھیں آپ کے نام اور فوٹو کے ساتھ www.aakashtimes.com پرشائع کریں گے۔۔۔۔۔۔ادارہ

رابطہ:aakashtimes0@gmail.com