شہرہ جھیل ڈل کے پانیوں پرغیر قانونی قبضہ کا سلسلہ جاری

سری نگر،2۔مئی ،ہ س:کشمیر میں اگرچہ آبی ذخائرکو اراضی میں تبدیل کرنے پر مکمل طور پر پابندی عائد ہے مگر شہرہ جھیل ڈل کے پانیوں پر غیر قانونی طور پر قبضہ کرکے اسے اراضی میں تبدیل کرنے کا سلسلہ جاری ہے اور اسی سلسلے کی ایک کڑی کے تحت سعیدہ کدل پل کے متصل نہ صرف دلدل کو اراضی میں تبدیل کرنے کی کوششیں کی جاری رہی ہیں بلکہ ڈل کے پانیوں پر بھی غیر قانونی قبضہ جمایا جارہا ہے۔سعیدہ کدل سرینگر کے رہنے والے ایک 80سالہ بزرگ نے نام ظاہرنہ کرنے کی شرط پر بتایا ” سعدہ کدل میں طبیہ کالج کی زمین کے متصل ہی پرانے زمانہ میں راشن گھاٹ ہوا کرتا تھا اور یہاں اکثر لوگ کشتیوں میں سوار ہوکر سرکاری چاول حاصل کرنے آتے تھے مگر بدلتے وقت کے ساتھ راشن گھاٹ کو خشک زمین پر دوسری جگہ منتقل کردیا گیا۔“ مذکورہ معمر شہری نے کہا کہ ناساز گار حالات کے دوران لوگ سبزی خریدنے کی غرص سے آتے تھے اور یہاں کرفیو اور دیگر صورتحال حال میں غذائی اجناس خریدا کرتے تھے جسکی وجہ سے وہاں تھوڑی سی خشک زمین یا دلدل پیدا ہوا۔ انہوں نے کہا کہ بعد میں جے کے پی سی سی نے وہاں ایک ٹین کا شڈ تعمیر کرکے پل کی تعمیر کی اور یہ ٹین کا شڈ تب تک قائم رہا جب تک وہاں پل کی تعمیر مکمل ہوگئی تاہم ہلکی یا بھاری بارشوں کی وجہ سے اس زمین پر پانی جمع ہوتا تھا حالانکہ 2014کے سیلاب نے مذکورہ اراضی کے سامنے قائم کشمیر طبیہ کالج کو زبردست نقصان پہنچایا جبکہ دلدل یا نالے کواراضی میں اب تبدیل کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں وہاں سیلاب کے پانی کی وجہ سے مزید مٹی جمع ہوگئی ہے۔ مذکورہ معمر شہری نے کہاکہ اب چند خود غرض عناصر نے نہ صرف دلدل کو زمین میں تبدیل کرنے کی کوشش کی ہے بلکہ اس پر غیر قانونی قبضہ بھی کیا ہے۔ معمر شہری نے بتایا کہ یہ سب مبینہ طور پر لاﺅڈا محکمہ کی ناک کے نیچے ہورہا ہے اور انکی جانکاری کے باﺅجود ہورہا ہے کیونکہ دلدل کو زمین میں تبدیل کرنے کا عمل سعیدہ کدل پل کے بالکل نزدیک ہورہا ہے جہاں ہزاروں لوگ اور گاڑیاں دن بھر چلتی رہتی ہیں اورآتے جاتے لوگوں کو سب کچھ نظر آرہا ہے مگر علاقے میں تعینات لاﺅڈا کے ملازمین کو کچھ بھی نظر نہیں آرہا ہے۔ سعیدہ کدل پل کے نزدیک پانی کو زمین میں تبدیل کرنے پر بات کرتے ہوئے وی سی لاﺅڈا حفیظ معسودی نے کہا ”آپ مجھے تصاویر بھیج دیں میں ٹیم روانہ کرکے وہاں سے غیر قانونی قبضے کو ہٹاﺅں گا اوردلدل کو پھر سے پانی میں تبدیل کریں گے۔

 

آپ ہمیں اپنی ہر طرح کی خبریں،مضامین،مراسلات اور ادبی تحریریں ارسال کریں۔۔۔ہم انھیں آپ کے نام اور فوٹو کے ساتھ www.aakashtimes.com پرشائع کریں گے۔۔۔۔۔۔ادارہ

رابطہ:aakashtimes0@gmail.com