ہمارا 90 فیصد وقت ویب ٹائم کا فون پر صرف ہوتا ہے

ہندوستان میں موبائیل کا استعمال ڈیسک ٹاپ سے چار سو فیصد زیادہ ہوتا ہے(ایک رپورٹ)

شالینا پلّے

ترجمہ و تلخیص: ایڈوکیٹ محمد بہاءالدین ، ناندیڑ مہاراشٹر
رابطہ:9890245367

2017ءمیں ہمارے ڈیجیٹلاستعمال کا تقریباً 90 فیصد حصہ موبائیل فون پر صرف ہوتا ہے۔ دیگر ممالک کی بہ نسبت سب سے زیادہ موبائیل استعمال کرنے والے ممالک کی فہرست میں ہندوستان اوّل نمبر پر ہے۔ گلوبل حصہ میں استعمال ہونے والے کُل تناسب میں ہمارا حصہ 30 فیصد پر مشتمل ہے۔

تجزیاتی کمپنی کامس کور کے اعداد و شمار کے مطابق ہندوستانی اپنے منٹوں کا استعمال موبائیل پر 89 فیصد آن لائن کرتے رہتے ہیں۔ جبکہ انڈونیشیا میں 87 فیصد ، میکسیکو میں 80 فیصد اور ارجنٹینیا میں 77 فیصد حصہ مارکٹ میں آن لائن طور پر موبائیل فون سے استعمال ہوتا ہے۔ اس کی اصل وجہہ یہ ہے کہ اسمارٹ فون کی قیمتیں گھٹ گئی ہیں اس طریقے سے اعداد و شمار کے مطابق ان کے استعمال میں فیس کی بھی کمی واقع ہوئی ہے۔

اوسطاً 2017ءمیں ہندوستانی 50 گھنٹوں میں تقریباً تین ہزار منٹس ٹیلی فون پر کرتے ہیں جبکہ بارہ سو منٹس ان کا استعمال ڈیسک ٹاپ پر ہوتا ہے۔ اس طرح سے ڈیسک ٹاپ اور موبائیل کا اس پر سبقت لے جانا جاری ہے۔ اس طریقے سے موبائیل فون کے کثرت استعمال مختلف ممالک جیسے ارجٹینیا، یو ایس میں ان کا استعمال چھ ہزار منٹس یا پھر پانچ ہزار منٹس سے زیادہ ان ممالک میں ہوتا ہے۔

یونیک موبائیل کے استعمال کرنے والے جو ڈیسک ٹاپ سے زیادہ استعمال کرتے ہیں وہ چار سو فیصد زائد ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ نئے ڈیجیٹل سے سننے والوں کی تعداد ہندوستان میں زیادہ ابھر رہی ہے۔ ہمیں اس کے آگے زیادہ موبائیل استعمال ہونے والے ممالک کے مسابقت میں آچکے ہیں ایسی رپورٹ کامس کور کمپنی نے دی ہے۔

بہت سارے ہندوستانی موبائیل فون کا استعمال فوری میسیج اور سوشل میڈیا کے لئے دینے کا رحجان عالمی سطح پر پھیل گیا ہے۔ جبکہ ملازمت کی تلاش کرنے والے ہندوستانی بھی اس کا استعمال کررہے ہیں۔ جیسا کہ میڈیکل انشورنس خدمات، دواخانوں کی تحقیق و تلاش وغیرہ وغیرہ۔ جبکہ یہ سب پہلے ڈیسک ٹاپ سے معلومات لی جاتی تھی۔ صحت سے متعلق امور کے لئے واضح طور پر استعمال ہونے والا موبائیل کا استعمال نسبتاً کلچرل امور کے مقابلہ میں کم ہے۔ یہ رپورٹ بھی کامس کور کمپنی نے دی ہے۔

پانچ موبائیل کے ایپس جو فون پر تھے، یعنی وہاٹس ایپ، گوگل پلے، یوٹیوب، جی میل اور گوگل سرچ ہیں۔ اب اس طرح ریٹیل مارکٹ کے لئے سب سے زیادہ استعمال ہونے والا Amazon نے ہندوستان میں نمایاں کامیابی حاصل کی ہے جو دیگر بازاری کمپنیوں سے زیادہ ہے۔ کمپنی نے یہ محسوس کیا کہ اس کے لئے بارہ فیصد سے زیادہ تیزی سے اس کے استعمال کا رحجان بڑھ گیا ہے۔ بقیہ بازار جیسے برجنٹینا، اسپین، میکسیکو ان کا استعمال ساٹھ فیصد سے کم ہی ہے۔

وہاٹس ایپ کا بھی سب سے زیادہ استعمال اس کی مصروفیت اور اس کے ذریعے شیئر کرنا ہندوستان میں پایا جاتا ہے۔ ہر منٹ کا 98 فیصد حصہ میسیجنگ ایپ یعنی وہاٹس ایپ پر خرچ ہوتا ہے۔ بقیہ دو فیصد حصہ فیس بک کے ذریعے پیام رسانی۔ دلچسپی کی بات یہ ہے کہ ایک فیصد پیام رسانی کا حصہ ہر منٹ کے لحاظ سے امریکن بھی وہاٹس ایپ کے ذریعے کرتے ہیں۔ بقیہ فیس بک سے پیام رسانی ہوتی ہے۔

ڈیجیٹل کے ذریعے مجتمع کرکے استعمال کا نظریہ حال ہی میں پیدا ہوا ہے۔ جس کے ذریعے بازار کی نصف سے زیادہ کاروبار کا اشتہار ہر سال جزوی طور پر تبدیل ہوتا جارہا ہے۔ جو بھی موبائیل ایپس کی دین ہے۔ ہندوستان میں دیکھا جاتا ہے موبائیل کے حصول کے لئے چودہ فیصد اضافہ ہوا ہے۔ اور یہ اس میں بتدریج اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ اس کمپنی کی رپورٹ میں یہ بات بھی شامل ہے۔

(مضمون نگار کے اپنے خیالات ہیں)

آپ ہمیں اپنی ہر طرح کی خبریں،مضامین،مراسلات اور ادبی تحریریں ارسال کریں۔۔۔ہم انھیں آپ کے نام اور فوٹو کے ساتھ www.aakashtimes.com پرشائع کریں گے۔۔۔۔۔۔ادارہ