ملک کی آزادی کیلئے ہرہندوستانی نے خو د کو پیش کردیا تھا :امریش مشرا

’1857میں بلند شہر کے انقلا بیو ں کا اہم کردرا‘مو ضو ع پر راج محل بینکٹ ہال میں سیمنا ر کا انعقاد

زبیرشاد

سکندر آباد ،14۔مئی:بلند شہر کے انقلابیوں نے ملک کی آزادی میں اہم کردار ادا کیا ہے دہلی کے قریب ہونے کی وجہ سے بلند شہر اور میرٹھ وغیرہ انقلابیوں کے مراکز تھے یہاں نہ صرف آزادی کےلئے خاکہ بنتا تھا بلکہ یہ انقلابیوں کی پناہ گاہ بھی تھا،مذکورہ خیالات کااظہار آج یہاں مکند سروپ سکشا سمیتی کے تحت ہونے والے سیمنار 1857کے انقلاب میں بلند شہر انقلابیوں کا کردار میں مقررین نے کیا ، سیمنار میں مقررین نے بلند شہر اور مضافات کے انقلابیوں کے جوش و جذبہ اور ان کی حب الوطنی پر گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ کس طرح پر آشوب حالات میں ملک کے جیالوں نے اس کیلئے اپنی جان نچھاور کی، سیمنار کی صدارت کرتے ہوئے با بو بد ھ دیو نے کہا کہ اس شہر کے انقلابیوں نے اپنے خون سے ملک کی تاریخ رقم کی ہے، انہوں نے کہا کہ جب تک ان لوگوں کی طرح ہمارے دلوں میں حب الوطنی کا جذبہ نہیں بیدار ہوگا بحیثیت قوم ہم ترقی نہیں کر سکتے ہیں لیکن اس کیلئے ضروری ہے کہ ہر طرح کے تعصب سے ہم خود کو پاک کر لیں، سیمنار کے مہمان خصوصی دانشور، مفکر اور فلم ساز و آزاد صحافی امریش مشرا نے کہا کہ ملک کی آزادی کیلئے بلاتفریق مذہب و ملت ہر ہندستانی نے خود کو پیش کر دیا تھا تو پھر آج تفریق کیوں برتی جا رہی ہے؟ انہوں نے اپنے خاص انداز میں متعصب افراد اور جماعتوں کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ایک طبقہ ہے جو جنگ آزادی کی تاریخ کو بدل دینا چاہتا ہے مگروہ اپنے ناپاک منصوبوں میں کامیاب نہیں ہوں گے، انہوں نے کہا کہ جب ہم سب مل ک ساتھ چلیں گے تبھی ہندستان ترقی کے افق پر جلوہ فگن ہوگا، پروگرام کے کنوینر ڈاکٹر محمد فاروق خان نے بلند شہر کے انقلابیوں کا تعارف کراتے ہوئے پہلی جنگ آزادی کے مقاصد اعر اس کی ناکامی کے اسباب پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اس جد و جہد نے ہندستانیوں کو ایک کچوکا لگایا تھا اور محض سو برس میں ہی غلامی کی زنجیروں کو توڑ کر رکھ دیا، علاوہ ازیں سیمنار میں جے ایس کالج کی پرنسپل ڈاکٹر سپنا اپریتی، ایم ایس انٹر کالج کے پرنسپل ڈاکٹر راج کمار، کنور عبد الرب ایڈووکیٹ، دنیش گوجر، دولت رام شرماوغیرہ نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا ،پروگرام کی نظامت کے فرائض وجے سروپ راہی نے انجام دئے ، سیمنار کو کامیا ب بنانے میں بدر الاسلام انصاری، سید اشتیا ق احمد ،راحت محمود خان، اتل کمار گوتم، جگدیش پرساد، محمد نعیم، محمد رضوان خان وغیرہ کا اہم کردار رہا ،شرکاءمیں رفیق الدین پہلوان، ریاض الدین، چودھری بھولے رام، ڈاکٹر انیس احمد، نعیم فریدی، اجے پپل، مہادیو دویدی، بھونیشور دت شرما، محمدعاشقین، کرن پال سنگھ، راجندر شرما، شاداب اخلاق، ڈاکٹر مظفرحسین، ڈاکٹر غضنفر اللہ وغیرہ کے نام قا بل ذکرہیں ، آخر میں پروگرام کنو ینر ڈاکٹرمحمد فاروق خان نے سبھی حاضرین و مہمانان کا شکریہ اد ا کیا ۔

 

آپ ہمیں اپنی ہر طرح کی خبریں،مضامین،مراسلات اور ادبی تحریریں ارسال کریں۔۔۔ہم انھیں آپ کے نام اور فوٹو کے ساتھ www.aakashtimes.com پرشائع کریں گے۔۔۔۔۔۔ادارہ

رابطہ:aakashtimes0@gmail.com