پنچایت الیکشن: ووٹنگ کے دوران زبردست تشدد،12کی موت،50زخمی

کولکاتہ،14۔مئی ،ہ س:مغربی بنگال میں پنچایت انتخابات کے لئے ووٹنگ صبح 7 بجے سے جاری ہے۔ اس دوران ریاست میں زبردست تشدد کی خبریں ہیں جس میں کم سے کم10افراد کے مارے جانے کی اطلاع ہے۔ الگ الگ مقامات پر ہوئی پرتشدد جھڑپوں میں50سے زائد لوگ زخمی ہوگئے ہیں۔
قابل ذکر ہے کہ ووٹنگ شام پانچ بجے تک چلے گی اور 17 مئی کو نتائج آئیں گے۔ انتخابات میں سکیورٹی کے مدنظر پڑوسی ریاستوں آسام ، اوڑیسا ، سکم اور آندھرا پردیش سے تقریباََ 1,500سکیورٹی اہلکار تعینات کئے گئے ہیں۔نندی گرام کے سنتی باڑی سے خبر آرہی ہے کہ بی جے پی کارکنان نے ٹی ایم سی اہلکار کی مبنہ طورپر انگلی کاٹ دی۔ دریں اثنا بھگوا پارٹی کی لیڈران کے حملہ میں 14 ٹی ایم سی کارکنان بھی زخمی ہوئے ہیں۔ترنمول کانگریس کے وزیر رویندر ناتھ گھوش کو ریاستی الیکشن کمیشن نے ناٹا باڑی میں بی جے پی الیکشن ایجنٹ کو تھپڑ مارنے کے لئے نوٹس بھیجا ہے۔ بتاتے چلیں کی لمبی قانونی کارروائی کے بعد مغربی بنگال میں پنچایت الیکشن ہورہا ہے۔ اگلے سال کے لوک سبھا الیکشن سے پہلے یہ ریاست میں آخری بڑا الیکشن ہورہا ہے۔
قابل ذکر ہے کہ مرشیدہ آباد اور میں ٹی ایم سی اور بی جے پی کارکنان کے درمیان ہوئی ہاتھا پائی میں بیلیٹ پیپر تالاب میں پھینکے گئے۔اس وجہ سے وہاں پر ووٹنگ رکنی پڑی۔غور طلب ہے کہ مغربی بنگال کے بیرپیڈا میں بوتھ نمبر 14/79کا ایک ووڈیو سامنے آیا ہے اس ووڈیو میں ٹی ایم سی کارکنان ووٹرس کو بوتھ پر جانے سے روکتے نظر آرہے ہیں۔

 

آپ ہمیں اپنی ہر طرح کی خبریں،مضامین،مراسلات اور ادبی تحریریں ارسال کریں۔۔۔ہم انھیں آپ کے نام اور فوٹو کے ساتھ www.aakashtimes.com پرشائع کریں گے۔۔۔۔۔۔ادارہ