فلائٹ میں تاخیر ہونے پر مسافروں کوملے گا معاوضہ

نئی دہلی،22مئی،ہ س:مرکزی سرکار نے ہوائی سفر کرنے والے مسافروں کو بڑی راحت دیتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ ہوائی سفر کے رد ہونے یا پھر ہوائی جہاز کی کسی غلطی کی صورت میں مسافروں کومعاوضہ یا پھر ٹکٹ کا ری فنڈ دیا جائے گا۔منگل کو شہری ہوا بازی کے وزیر مملکت جینت سنہا نے ایک ٹوئٹ کے ذریعہ کہا کہ اگر فلائٹ رد ہوتی ہے یا پھر تاخیر سے پرواز کرتی ہے تو مسافر کومعاضہ یا ٹکٹ کوری فنڈ کیا جائے گا۔شہری ہوا بازی کی وزارت کے چارٹر تجویز پر سنہا نے کہاکہ مسافروں کے حقوق بڑھائے جائیں گے۔ ساتھ ہی کنسلیشن چارجز میں ایئر لائنس کی منمانی کو بھی ختم کیاجائے گا۔ انہوںنے کہاکہ اگرفلائٹ چار گھنٹے سے زیادہ لیٹ ہوتی ہے تو ایسے میں ٹکٹ کینسل کرانے پر مسافر پورا کرائے واپس لینے کا حقدار ہوگا۔ ابھی یہ تجویز ہے اس پر تمام کی رائے لی جائے گی۔
تجویز کے تحت یہ ہے کہ اگر ٹکٹ کو 24گھنٹے کے اندر کینسل کرایا جاتا ہے تو کوئی چارج نہیں لگے گا۔مسافروں کی فلائٹ کینسل ہونے کی اطلاع دو ہفتے سے پہلے نہیں دی جاتی ہے یا پھر شیڈول ڈیپارچر سے 24گھنٹے پہلے تک کینسلیشن کی اطلاع نہیںدی جاتی ہے تو ایسے میں ایئر لائن کومسافروں کودو گھنٹے کے اندر دوسری فلائٹ کرا کر دینا ہوگی۔ یا پھر ٹکٹ ری فنڈ کرنا ہوگا۔
وہیں تین سے چار گھنٹے کی تاخیر کے سبب مسافر کی کنکٹنگ فلائٹ چھوٹ جاتی ہے تو ایسے مین اسے پانچ ہزار روپے کا معاوضہ دینا ہوگا۔چار سے 14گھنٹوں کی تاخیر کے لئے دس ہزار اور 12گھنٹوں سے زیادہ کی تاخیر کے لئے 20ہزار روپے کامعاوضہ دینا ہوگا۔ایئر لائن اور اس کے ایجنٹ ساتھ مل کر بیسک فیئر پلس فیول سر چارج سے زیادہ کینسل یشن چارج نہیں لگا سکتے۔

 

آپ ہمیں اپنی ہر طرح کی خبریں،مضامین،مراسلات اور ادبی تحریریں ارسال کریں۔۔۔ہم انھیں آپ کے نام اور فوٹو کے ساتھ www.aakashtimes.com پرشائع کریں گے۔۔۔۔۔۔ادارہ